اہل تصوف کی تضلیل – کیا جاوید احمد غامدی معافی مانگیں گے؟

اہل تصوف کی تضلیل – کیا جاوید احمد غامدی معافی مانگیں گے؟

ڈاکٹر عمیر محمود صدیقی

غامدی صاحب نے اپنی کتاب برھان میں ایک مضمون  ‘اسلام اور تصوف’ کے نام سے بھی شائع کیا ہے ۔یہ مضمون ۱۹۹۳ء میں لکھا گیا جس میں تصوف کو اسلام کے مقابل ایک متوازی دین قرار دیتے ہوئے تمام اہل تصوف کی تضلیل کی گئی ۔غامدی صاحب نے اس مضمون میں تصوف کو عالمگیر ضلالت قرار دیا اور حضرت شیخ عبد القادر جیلانی ، حضرت امام غزالی ، حضرت شیخ اکبر محی الدین ابن عربی ، حضرت مجدد الف ثانی اور مولانا روم و شاہ ولی اللہ محدث دہلوی رحمہم اللہ جیسی عظیم شخصیات کی طرف انکار نبوت و ختم نبوت کی مذموم نسبت کی ۔ ۱۹۹۳ء کے بعد سے پہلی مرتبہ غامدی صاحب کے کسی متعلق پر ان کی یہ غلطی واضح ہوئی ہے کہ انہوں نے ان بزرگوں کے لیے تخفیف کے کلمات لکھ کر امت مسلمہ کی دل آزاری کی ہے ۔غامدی صاحب کے شاگرد اور ان کے ادارے کے سربراہ حسن الیاس صاحب نے پہلی مرتبہ اس ناچیز کی نشاندہی پر یہ فرمایا ہے کہ اسے درست ہونا چاہئے، حذف ہونا چاہئے اورغامدی صاحب کو معافی مانگنی چاہئے۔ اللہ تعالیٰ حسن الیاس صاحب کو جزائے خیر دے اور ان کو ہمت دے کہ وہ یہ کام کروانے میں کامیاب بھی ہو جائیں۔ 


7 Courses in 1 – Diploma in Business Management



Categories: Ideology, Islam, Videos

Tags: , , , ,

1 reply

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: